• کیا عورت مرد کے برابر ہے؟

    میڈیا میں خلیل الرحمن قمر پر بار بار یہ اعتراض ہو رہا ہے کہ اس کے نظریات کے مطابق عورت، مرد کے برابر نہیں ہے اور وہ ہوتا کون ہے ایسی بات کرنے والا۔ ہم اس پر لکھ چکے کہ عورت، مرد کے برابر نہیں ہے بلکہ اس سے چھوٹی ہے؛ جسمانی اعتبار سے بھی، دنیاوی اعتبار سے بھی اور دینی پہلو سے بھی۔ مرد عورت کی نسبت فیزیکلی مضبوط ہے، اس میں کیا شک ہے۔ ہم یہاں نوع مرد اور نوع عورت کی بات کر رہے ہیں یعنی اوور آل بات ہو رہی ہے جبکہ کوئی خاص عورت کسی...


  • عورت: لوئر، مڈل اور ہائر کلاس میں

    یہ مان لینا بہت ضروری ہے کہ مسلم معاشروں میں لوئر کلاس میں عورت کی عزت نہ ہونے کے برابر ہے۔ اس طبقے کی عورت مظلوم ہے، ظلم سہتی ہے، مار کھاتی ہے، گالیاں سنتی ہے، مزدوری کر کے اپنے مردوں کو کھلاتی ہے، مردوں کے لیے ایک خادمہ ہے، چاہے وہ ماں ہو، بیٹی ہو، بہن ہو یا بیوی۔ ان مظلوم عورتوں کے حق میں آواز بلند کرنا جہاد کے مترادف ہے اور اسلامی تحریکوں اور مذہبی طبقات کی یہ دینی ذمہ داری ہے کہ ایسی این۔جی۔اوز (NGO’s) بنائیں جو اس مظلوم عورت کی داد رسی کر سکیں۔ رہی...


  • میرج کاؤنسلنگ

    ازدواجی مسائل پر وقتا فوقتا لکھتا رہتا ہوں تو میاں بیوی دونوں میں سے کوئی ایک رابطہ کرتے رہتے ہیں اور اپنے مسائل میں مشورہ بھی چاہ رہے ہوتے ہیں۔ تو جو سمجھ میں آتا ہے، عرض کر دیتا ہوں۔ لیکن میں اکثر میاں بیوی کو کہتا ہوں کہ اگر مسئلے کا حل چاہتے ہیں تو دونوں رابطہ کریں اور ایک ساتھ کریں۔ صحیح بات اسی وقت سامنے آتی ہے جب دونوں طرف سے سنی جائے۔ اور مسائل بھی اسی وقت صحیح طور حل ہو پاتے ہیں جب آپ دونوں کو سمجھنے کے بعد دونوں کو ہی کچھ مشورہ ایک...


  • خوابوں کا سائنسی مطالعہ

    خوابوں میں ہم جس دنیا کی سیر کرتے ہیں، اس دنیا کی حقیقت کیا ہے؟ کیا وہ ہمارے اپنے نفس کی تخلیق کردہ دنیا ہوتی ہے یا ہم واقعی میں کسی دوسری دنیا parallel world میں پہنچ جاتے ہیں۔ تو بعض اوقات ہم اپنے لا شعور کی دنیا میں ہی گھوم رہے ہوتے ہیں اور جن کرداروں (characters) سے ہماری ملاقات ہوتی ہے، وہ ہمارے لا شعور کے تخلیق کردہ کردارہی ہوتے ہیں اور ایسا ان خوابوں میں ہوتا ہے جو کہ نفسی ہوں۔اور بعض اوقات ہم جن کرداروں سے ملاقات کرتے ہیں، وہ اپنی حقیقت رکھتے ہیں، وہ ہمارے...


  • کیا صحیحین کی صحت پر ’اجماع‘ ہے؟

    یہ زمانہ فتنوں کا زمانہ ہے، آئے دن کسی نہ کسی نئے فتنے کا ظہور ہوتارہتا ہے۔ اللہ تعالیٰ نے چونکہ اس دنیا کو ’دارالابتلا‘ بنایا ہے، اس لیے یہ تو ممکن نہیں ہے کہ دنیا سے شر بالکل ختم ہو جائے۔ اگر ایک برائی اپنے انجام کوپہنچے گی تو اس کی جگہ دوسری برائی لے لے گی، لیکن یہ اللہ تعالیٰ کی سنت ہے کہ وہ کسی بھی باطل یاشر کو دوام نہیں بخشتے۔ دوام، ہمیشگی، تسلسل اور بالآخر غلبہ، چاہے وہ دلیل کی بنیاد پر ہو یا قوت کی بنیاد پر، صرف حق ہی کے لیے ہے۔ اُمت...